اے دشمن دین

،اے دشمن دیں تونے
کس قوم کو للکارا
لے ہم بھی ہیں صف آرا

آ دیکھ کہ یہ بازو
بازو ہیں کہ تلواریں
سینے ہیں مجاہد کے
یا آہنی دیواریں

مل جاتیں ہیں قدموں سے
کس طرح سے دستاریں
ہم تجھ کو دکھا دیں گے
سو بار یہ نظارہ

جس راہ سے آے گا
اس راہ پے مارینگے
مڈ کر بھی نہ دیکھے گا
یوں نشہ اتارے گیں

ہم موت کی وادی سے
یو تجھ کو گزارینگے
اس قوم سے لڈ نے کی
ہمت نہ ہو دوبارہ

اس قوم کا ہر بچہ
الله کا سپاہی ہے
اس خاک کا ہر ذرہ
تقدیر الہی ہے

اس خطے کا ہر گوشہ
اک زندہ گواہی ہے
ایمان کا ہے گہوارہ

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google photo

You are commenting using your Google account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s