نبی کے صحابہ کے رستے پہ چل کے

نبی ﷺ کے صحابہؓ کے رستے پہ چل کے
دلوں کا سکوں ہم نے حاصل کیا ہے
لگا ہے نشہ جب سے جنت کا ہم کو
اُچاٹ اپنا جی اس جہاں سے ہوا ہے

وہ ﷺ طائف کی وادی میں کھا کھا کے پتھر
تمہارے لیے جو تڑپتا رہا تھا
اسی کے طریقے کو پیروں سے روندھا
ذرا خود بتاؤ یہ کیسی وفا ہے؟

یہ وہ موت ہے دوستو جس کی خاطر
نبی ﷺ نے بھی مانگی تھیں رب سے دعائیں
کَٹایا ہے اس راہ میں جس نے سر کو
خدا کی قسم وہ امر ہو گیا ہے

سنو! احد کے پار سے یہ صدائیں
انس بن نضرؓ کی تمہیں کہہ رہی ہیں
جو اللہ کی راہ میں جاں لُٹا دے
وہی اصل میں عاشقِ مصطفٰی ﷺ ہے

مصائب کے میدان میں کود پڑنا
طلب میں شہادت کی دل کا مچلنا
خدا کے لیے سارے عالم سے کَٹنا
حقیقت میں فردوس کا راستہ ہے

محاذوں سے آتی جنت کی خوشبو
میرے دل کو بے چیں کیے جارہی ہے
چلی ہے جو فردوس سے ٹھنڈی ٹھنڈی
جوانو!بلاتی تمہیں یہ صبا ہے

 

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google photo

You are commenting using your Google account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s