کرائے کے گدھو ں کے نام ایک خط

فضیلۃ الشیخ حسین محمود حفظہ اللہ

ترجمہ:ابوعبدالرحمن السلفی حفظہ اللہ(فک اللہ علیٰ اسرہ من سجن الصلیب)

بسم اللہ الرحمن الرحیم
الحمداﷲ وحدہ والصلاة والسلام علی من لا نبی بعدہ ۔۔ اما بعد


بیشک آخری زمانے میں لوگ اتنے بیباک ہو جایئں گے کہ روئے زمین پر سب سے اچھے مسلمانوں(مجاہدین) اور ان کے قائدین کے خلاف زہر اگلیں گے اور یہی سب آج کل ہماری آنکھوں کے سامنے ہو رہا ہے۔ بدترین لب و لہجہ رکھنے والے جھوٹے، حقیقی رہنماؤں کے خلاف زہر اگل کر اور مذاق اڑا کر لطف اندوز ہوتے ہیں۔ یہ جھوٹ کے جادوگر اور شیطان، امریکہ میں جمع ہو کر ایسے الفاظ تلاش کرتے ہیں جسے مجاہدین پر چسپاں کرکے بدنام کیا جا سکے۔
اور جب مجاہدین ،دشمنان اسلام کو سرحدوں پر روکتے ہیں، ان کے سر قلم کرتے ہیں، اور صلیب کے پجاریوں میں جب کھیلیں ٹھوکتے ہیں تو یہ گدھے ان کا ساتھ دیتے ہیں اور ان کا دفاع کرتے ہیں اس لئے ہم پر مجاہدین کی طرف سے اب یہ فرض بنتا ہے کہ ہم ان گدھوں کو جواب دیں اور ان شیطان کی اولادوں کی گمراہی کوبیا ن کریں تا کہ یہ لوگوں کواﷲ اور مجاہدین سے قریب ہونے اور محبت کرنے سے نہ روک سکیں۔ہم اﷲ سے دعا کرتے ہیں کہ مجاہدین کو طاقت اور فتح عطا فرما ئیں۔
یہ گدھے جن کے پیٹ پر طواغیت اور امریکہ بیٹھا ہوا ہے اور جنہیں یہ گدھے تباہی کی طرف لے کر جا رہے ہیں، مسلمانوں کے بارے میں جھوٹ بولتے ہیں اور کہتے ہیں کہ مجاہدین اور جو بھی ان کے دوست اور خیر خواہ ہیں ، خوارج میں سے ہیں جو دائرہ اسلام سے نکل چکے ہیں۔
تو میں اﷲ کی مدد سے کہتا ہوں:
پہلا: کہ خوارج کبیرہ گناہ کی وجہ سے لوگوں کی تکفیر کرتے تھے، لیکن ہم کبیر ہ گناہ کی وجہ سے کسی کی تکفیر نہیں کرتے۔ ہم نواقض الاسلام کے مرتکب کی بھی اس وقت تک تکفیر نہیں کرتے جب تک ہم اسے اسلام بیان نہ کریں اور اس پر حجۃ قائم نہ کر لیں۔
دوسرا: خوارج نے مسلمانوں کا خون حلال کر دیا تھااور ہم یہ نہیں کرتے، ہا ں اگر کو ئی قتل کرتا ہے، شادی شدہ زانی یا جو مرتد ہو جاتا ہے، یا جو اسلام اور مسلمانوں کو چھوڑ دیتا ہے۔ اور یہ سارے کام ان گدھوں کے حکمرانوں میں پائے جاتے ہیں۔
تیسرا: یہ کرائے کے گدھے کہتے ہیں، کہ مجاہدین مسلمان حکمرانوں کی تکفیر کرتے ہیں۔یہ بات وہ اپنی ضرورت کے لئے کرتے ہیں۔اس لئے وہ حکمرانوں کوحضرت علی ،حضرت معاویہ اورحضرت عمروبن العاص رضی اللہ عنہم کی طرح پیش کرتے ہیں۔ ان میں اور صحابہ رضی اللہ عنہم میں زمین اور آسمان کا فرق ہے۔ مجاہدین حضرت علی ، حضرت معاویہ و حضرت عمر رضی اللہ عنہم کی تکفیر نہیں کرتے، لیکن وہ ضرور ان کی تکفیر کرتے ہیں جنہوں نے مشرکین کا ساتھ دیا اور مسلمانوں کے خلاف لڑے، اور جنہوں نے اﷲ کے احکام کو چھوڑ دیا اور کفر کے قانون کو اپنا لیا۔ کیونکہ صرف ایک اﷲ کو حکم اور قانون دینے کا حق حاصل ہے۔کیونکہ:
وَمَن لَم یَحکُم بِمَا اَنزَلَ اللہُ فَاؤُلٰئِکَ ھُمُ الکَافِرُونَ
” جو بھی اﷲ کے نازل کردہ قانون کے مطابق فیصلہ نہیں کرتے وہ کافر ہیں“۔
اور اﷲ فرماتا ہے:
وَمَنۡ یَتَوَلَّھُمۡ مِنۡکُمۡ فَاِنَّہُ مِنۡھُمۡ۔ (المائدہ:15)
”اور جو بھی ان کو دوست بناتا ہے، وہ انھیں میں سے ہے“۔

اور یہ احکام اﷲ نے نازل فرمائے ہیں، جن کی ان گدھوں کو کوئی سمجھ بوجھ نہیں.
چوتھا: خوارج نے غلط جگہوں سے دلائل لئے لیکن ہم تو آپ کو انسانی قوانین بنانے والوں کے کفر اور مسلمانوں کے مقابلے میں کفار کی مدد کرنے والوں کے کفر کے دلائل قرآن ،اورسنت ، اجماع ، اماموں کے اقوال، علماءسلف اورعلماءخلف سے دیتے ہیں۔ لیکن تم نے قرآن اور سنت میں نازل ہونے والے اور اجماع سے ثابت ،جہاد اور حاکمیت کے معنی اور دلائل تبدیل کر دئیے ہیں تاکہ اپنے طواغیت کو خوش کر سکو۔
پانچواں: خوارج فسق اور ظلم کی وجہ سے حکمرانوں کے خلاف بغاوت کو جائزسمجھتے ہیں، لیکن ہم اس وقت تک حکمرانوں کے خلاف بغاوت نہیں کرتے جب تک ان سے صریح کفر کا ارتکاب نہ ہو جائے۔ اور اس ارتکاب کی واضح دلیل اور ثبوت ہو جس کی بنیاد پر اﷲ سے ڈرنے والے اور لوگوں کی پرواہ نہ کرنے والے علماءفیصلہ کرتے ہیں۔
چھٹا: خوارج شفاعت ( قیامت کے روز) کے منکر ہیں، لیکن ہمارا شفاعت پر ایمان ہے اور ہم اﷲ سے دعا کرتے ہیں کہ ہمیں دین اسلام پر رکھے جب تک ہم رسول اﷲصلی اللہ علیہ وسلم سے نہ مل لیں اور ہمیں رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کی شفاعت نہ مل جائے۔جس دن بدعتیوں اور دین کو تبدیل کرنے والوں سے کہا جائے گا کہ دور ہٹو، دور ہٹو مجھ سے دور ہٹو۔
ساتواں: خوارج کے عقائد قرآن کے بارے میں اور ”اﷲ کو دیکھنے کے بارے میں“پر جہمیوں کے ، اور اﷲ کی صفات کے عقیدے پر معتزلہ کا اثر ہے۔ خوارج خبرواحد کو دلیل نہیں مانتے اور جو سنت بھی قرآن کے خلاف ہو اسے چھوڑتے ہیں جیسے سنگسار کرنا اور چوری کی مقدار ، وغیرہ۔ جب کہ ہمارا عقیدہ ان سب کے بار ے میں وہی ہے جو اس امت کے سلف کا تھا۔ اس لئے ہم محمدصلی اللہ علیہ وسلم ، ابوبکر، عمر، عثمان علی رضی اللہ عنہم اجمعین، سارے صحابہ رضی اللہ عنہم اور اماموں اور ان سب کے جو ان کے راستے پر چلے،کے عقیدے پرہیں۔
اس سے یہ بات واضح ہوجاتی ہے کہ جنہوں نے بھی ان گدھوں کو کر ائے پر لیا ہے ان سے بہت بڑی غلطی سرزد ہوئی ہیں کیونکہ یہ گدھے ہینکنے والے گدھوں سے زیادہ احمق اور بیوقوف ہیں۔
تو اے کرائے کے گدھوں اور ان کے حکمرانو سن لو!
تم بیشک جہاد کے معاملے میں قادیانی بن گئے ہو، انھوں نے بھی صرف برطانیہ کے خلاف جہا د کا انکار کیا تھا اور تم بھی صرف امریکہ کے خلاف جہاد کے منکر ہو۔ اورقادیانیوں نے کہا کہ برطانیہ ہمارا رہنما ہے اور تمہارے حکمران امریکہ(صلیب کے پجاریوں) کو اپنا قائد اور رہبر مانتے ہیں اور اپنے فیصلے ان سے کرواتے ہیں اور تم پر حکومت بھی ان کے نام کی کرتے ہیں۔
اور تمہارے حکمران سکھوں کی طرح ہیں جنہوں نے اسلام، عیسائیت اور یہودیت کو اکٹھا کر کے اپنا مذہب بنایا۔ اور تمہارے امیر بھی شریعت کو عیسائیت اور یہودیت کے ساتھ خلط ملط کر تے ہیں۔ اس لئے تمہارے تجارتی قوانین میں یہودیت اور سزاؤں میں عیسائیت نظر آتی ہے۔ جہمیہ بھی یہودیوں (ابین بن سامان ) کے نظریات سے متاثر ہو گئے تھے اور اپنی گمراہی میں اس قدر گر گئے تھے کہ قرآن کے ایک حصے کو ماننے لگے اور دوسرے کو جھٹلانے لگے۔ لیکن تمہارے حکمران تو یہودیوں سے بھی بد تر ہیں۔ یہ قرآن کے چھوٹے حصے کو مانتے ہیں اور بڑھے حصے کا انکار کرتے ہیں۔ اپنے نفس کو خوش کرنے کے لئے اﷲ کے کچھ احکام لیتے ہیں، جیسے شادی کے احکام اور اﷲ کے باقی احکام جیسے تجارت اور معاش کا انکار کر کے اس کی جگہ کفار کے قوانین کو لاگو کرتے ہیں۔ اسی طرح اپنے ”یہودی ، عیسائی“ مالک کو خوش کرنے کے لئے، شرعی سیاست کو کفر کی سیا ست سے، شرعی سزاؤں کو کفر کی سزاؤں سے، جہاد اور ارتداد کے احکام کو کفر کے احکا م سے تبدیل کر تے ہیں۔
اور تمہارے حکمران، امریکہ کے متعلق عقیدہ میں جبریہ ہیں۔ اس لئے وہ یہ یقین رکھتے ہیں کہ امریکہ کی مرضی اور خوشی کے بغیر کچھ نہیں ہوتا۔اور جس طرح صو فیہ کے ساتھ ابدال اور اقطاب ہوتے ہیں ، اسی طرح ان کے ساتھ امریکہ ہوتاہے۔ جبریہ اور صوفیہ کے اسی ملاپ سے تمہارے حکمران بنتے ہیں۔ ہم انہیں تمہارے ہاں خوش آمدید کہتے ہیں۔
اور تم حکمرانوں کے معاملے میں روافض کی طرح ہو۔ روافض اپنے اماموں کو معصوم سمجھتے ہیں اور تم اپنے حکمرانوں کو معصوم سمجھتے ہو۔ روافض چھپے ہوئے امام پر یقین رکھتے ہیں اور تمہارے حکمران بھی چھپے امام پر یقین رکھتے ہیں جسکا نام شیرون ہے جسکے پیچھے بین الاقوامی صیہونی ہیں۔ اور روافض”ولایتِ الفقیہ “پر ایمان رکھتے ہیں، لیکن تمہارے حکمران توولا یت الفقیہ کے عقیدے میں روافض سے بھی آگے بڑھ گئے ہیں کیونکہ شیعہ خمینی کو معصوم نہیں مانتے، جبکہ تم اپنے حکمرانوں کو معصوم مانتے ہو۔ تمہارے حکمرانوں کے لئے بش کی بات اﷲ کی بات سے بڑھ کر ہے۔
اسی لئے اﷲتعالیٰ فرماتے ہیں :
یٰاَیُّھَا الَّذِینَ ٰامَنُوا لاَتَتَّخِذُوا الکٰفِرِینَ اَولِیَاءَ مِن دُونِ المُؤمِنِین۔(النساء144:)
”اے ایمان والو! مومنوں کو چھو ڑ کر کفار کو دوست نہ بناؤ،“ ۔

اورجب بش نے کہا ”یا ہمارے ساتھ یا ہمارے خلاف“، تو تمہارے حکمرانوں نے بش کو کہا، ”ہم تمہارے ساتھ ہیں“۔ اور اﷲ کی بات کے انکاری ہوئے۔ ان سے تو رافضہ بھی اچھے ہیں کیونکہ ان کے مطابق امامت کا حق صرف نبی صلی اللہ علیہ وسلم کے خاندان کو ہے ، لیکن تمہارے حکمران تو امامت کو اپنے محلوں میں سمجھتے ہیں۔
اور تم اور تمہارے حکمران حلولیہ کی طرح ہیں، جن کے خدایہودیوں اور عیسائیوں (انسانوں) میں آئے جنہوں نے ان کے لئے قوانین بنائے، جس کی وجہ سے انہوں نے اﷲ کے قوانین کو چھوڑ دیا۔ لیکن تمہارے حکمران توحلولیوں سے بھی بد تر ہیں،کیونکہ ان کے مطابق خدا توسب انسانوں میں سے آتا ہے، یہا ں تک کہ مسلمانوں میں بھی۔ جب کہ تمہارے حکمرانوں کا خدا صرف یہودیوں اور عیسائیوں میں آتا ہے۔
اور تم اشعریوں اور معتزلہ کی طر ح ہو اور ان کی طرح قرآن اور سنت کی بجائے اپنی عقل اور منطق کو ترجیح دیتے ہو۔اور تم اپنے حکمرانوں کی تعریفیں کرتے ہو۔ اگر تم یہ کہو کہ ہم ایسے نہیں لیکن فتنہ اور فساد بچنے کے لئے ہم ایسا کرتے ہیں، اگر ایسا ہے تو پھر تم نے یزیدی نصیبیہ اور رافضی تقیہ کے عقائد کو اپنے لئے اکٹھا کر لیا ہے۔
اور تم خوارج کی طرح ہو، جو مسلمان حکمرانوں کی تکفیر کرتے تھے، اور تم مسلمانوں(مجاہدین ) کی تکفیر کرتے ہو۔ اور تم خوارج ہو کیونکہ تم نے نہ صرف اپنے لئے بلکہ امریکہ کے لئے بھی مسلمانوں کے خون کو حلال کر دیا ہے۔ اور تم خوارج ہو کیونکہ تم ان کی طرح آیات کو تبدیل کرتے ہو جیسے جہاد، حاکمیہ ،الولاءوالبراءاور کافروں کے بارے میں احکام تبدیل کرتے ہو۔
اور تم صوفسیطہ (سویت) کی طرح ہو، ان کی طرح غلط اور جھوٹ کے ذریعے اپنے مخالفین پر الزامات عائد کرتے ہو۔ جب کہ تم نے اﷲ کے واضح اور صاف احکام چھوڑ دئے ہیں جو کہ سچائی اور حقیقت پر مبنی ہے۔ لیکن تم تو فضول اور بیکار باتوں میں الجھے ہوئے ہو۔
اور تم المزداکیہ، القرامیہ اور الزمزیقہ کی طرح ہو۔ تم نشر و اشاعت کے ذریعے شرم اور بے حیا ئی پھیلا رہے ہو،اور یہ فتنہ ہر مسلمان گھر میں داخل ہو گیا ہے تاکہ اسلامی روایات کا خاتمہ کر سکے۔تم نے فحاشی اور عریانی کے اڈے کھول رکھے ہیں، اس کے علاوہ رسالوں اور کتابوں کے ذریعے تم ترقی کے نام پر گندگی پھیلا رہے ہو۔
اور تم دروزیوں کی طرح ہو، جنہوں نے الحاکم بامراﷲ العبدی کو اپنا معبود بنا لیا تھا اور تم نے اپنے حکمرانوں کو اپنا معبود بنا لیا ہے۔ تم ان کے سارے احکامات کو مانتے ہوجو انھوں نے اﷲ کے مقابلے میں بنا ئے ہیں۔ تم ان کی عیسائیوں اور یہودیوں کی دوستی میں ساتھ دیتے ہو۔ تم اﷲ اور رسول صلی اللہ علیہ وسلم کی دشمنی میں ان کا ساتھ دیتے ہو۔ اور اگر تم کہو کہ ہم نے انھیں اپنا معبود نہیں بنایا ہے تو ہم تمہیں رسول صلی اللہ علیہ وسلم کی حدیث سناتے ہیں۔
”کیا وہ حلال کو حرام نہیں بناتے، جن کو تم حرام مانتے ہو، اور کیا وہ حرام کو حلال نہیں بناتے ، جس کو تم حلال سمجھتے ہو؟اور یہی ان کی عبادت ہے“(احمد، الترمذی)۔
اور تم قومیین(Nationalist )کی طرح ہو، تم کو اپنے ملک کے سرحد سے باہر مسلمانوں کی قتل و غارت، عزت اور ناموس سے کو ئی سروکارنہیں۔ تم اپنے ان حکمرانوں کو مانتے ہو جو کہتے ہیں کہ یہ ان کا اپنا اندرونی معاملہ ہے اور ہمیں ان سے کوئی لینا دینا نہیں۔ اور تم باتھست((Bathist ہو جو عربیوں اور اسلام کو ترجیح دیتے ہیں اور غیر عربیوں سے رشتہ اور ناطہ نہیں جوڑتے۔
اور تم مرجئہ ہو۔ تم عمل سے کفر کے ارتکاب کے قائل نہیں ہو اور تکفیر کو دل کے عقیدے سے جوڑتے ہو۔ تمہارے ہاں جو اﷲ کے مقابلے میں قوانین بنا تا ہے، کفا ر سے دوستی کرتا ہے، کفار کے لئے مسلمانوں کو قتل کرتا ہے، مسلمانوں کے مقابلے میں کفار کی مدد کرتا ہے، جو مسلمانوں کے علاقے کفار کے حوالے کرتا ہے،اس وقت تک کافر نہیں ہے جب تک کہ وہ ان سب کا استحلال(دل کا ایمان) نہ کر لے۔
اور تم کمیونسٹ (Communist)ہو، وہ تو پھر بھی ساری دولت کے سارے عوام میں برابر تقسیم کے قائل ہیں ، لیکن تم صرف دولت کے حکمرانوں میں تقسیم کے قائل ہو۔ تم نے لوگوں کے اموال کو ان کے لئے حلال بنا دیا ہے، جیسے ان کا جی چاہے تقسیم کر دے، خرچ کر دے یا اڑا دے ۔ تمہارے یہی حکمران اپنے مابین کمیونسٹ ہیں اور عوام کے لئے سرمایہ دار ہیں۔
اور تمہاری مثل صوفیہ اور باطنیہ کی طرح ہے۔ جو غلو میں سب سے آگے ہیں۔ آپ نے حکمرانوں کو شریعت سے آزاد کر لیا ہے۔ وہ اﷲ کے قوانین کو نافذ نہیں کرتے، وہ اﷲ کی دین کی مدد نہیں کرتے، ان میں سے کچھ نماز نہیں پڑتے اور یہ سب کچھ تمہارے آنکھوں کے سامنے ہو رہاہے اور پھر بھی آ پ کی نظر میں وہ سب سے افضل، عزت دار اور ولی اﷲ ہیں۔
اور تم یہودی اور عیسائیوں کی طرح ہو، انہیں کی طرح مسلمانوں کو بنیاد پرست اور دہشت گرد کہتے ہو۔ اور جو کوئی بھی رسول صلی اللہ علیہ وسلم کا لایا ہوا صحیح اور مکمل دین نافذ کرناچاہتے ہیں ان کے ساتھ دشمنی اور بغض رکھتے ہو۔
اور تمہاری مثال باطنیہ کی طرح ہے ، تم کہتے ہو کہ نصوص کی تشریح صرف چند علما ہ کے پا س ہیں۔ باطقہ ( )کے سو اہ کسی اور کا ان میں غور و حوض کرنا جائز نہیں ہے۔ اور ان باطقہ نے جہاد، حاکمیہ، الولاءوالبراءاور کفار کے احکامات اور نصوص کو مسخ کر دیا ہے۔
اور تمہارے حکمران کیتھولک ((Catholicعیسائیوں کی طرح ہیں، انھی کی طرح مذہبی تنظیمیں اور جماعتیں بنا تے ہیں اور ان کو پھرتم جیسے کرایہ کے گدھوں کے حوالے کرتے ہیں، جس کے ذریعے تم لوگوں کو گمراہ کرتے ہو۔ جو کوئی بھی اس جماعت سے باہر ہوتا ہے، ان کے خلاف نہ کچھ کر سکتا ہے نہ کہہ سکتا ہے۔ ان حکمرانوں نے کچھ ادارے ملحدوں )کےAtheist (حوالے کر دیئے ہیں اور علماءکو مذہبی تقریبات تک محدود کر دیا ہے، اس طرح سے تم نے پروٹسٹنٹ(Protestant)عیسائیت اور کیتھولک عیسا ئیت کو اپنا لیا ہے۔
اے ان گدھوں کے کرایہ دارو!
بے شک علماءنے تمہارے دلائل کا جواب دیا ہے اور ان کو غلط ثابت کر دیا ہے۔ اور تمہارے چھپے ہوئے عزائم کو بے نقاب کر دیا ہے۔ مجاہدین پر خوارج کی مہر لگانے سے تم شکست کے دلدل میں اور دھنس گئے ہو۔ جب ان گدھوں کو اپنے آقاؤں سے حکم ملا کہ لوگوں کو جہاد اور مجاہدین سے متنفر کرنے کے لئے کچھ کروتا کہ وہ اپنے محلوں کو بچا سکیں اور اسلام دشمنی جاری رکھ سکیں۔ تو شیطان نے تمہیں اس پر آمادہ کیا کہ مسلمانو ں کو آپس میں لڑاؤ۔ اس کے لئے تم نے مختلف جماعتیں بنائی جن کے ذریعے تم نے لوگوں کو بحثوں اور الجھنوں میں الجھائے رکھا ہے۔ اور
یہی کرائے کے گدھے اس فتنہ ، فساد اور گمراہی کے آگ کو بھڑکاتے ہیں تاکہ دشمنان اسلام مسلمانوں کے علاقوں اور مذہب پر قبضہ کر سکیں۔ لیکن تم اس قابل کہاں، اور کبھی نہ ہو گے۔ تمہارے منہ سے ایسا کوئی لفظ نہیں نکلتا جس کا رد مسلمان کے پاس نہ ہو۔ تمہارے منہ سے ایسا کوئی باطل لفظ نہیں نکلتا جسے علماءحق تہس نہس نہ کردیں۔
اور لعنت ہو تم پرکیونکہ تم اﷲ پر جھوٹ باندھتے ہو:
یُرِیدُونَ اَن یُّطفِئُوا نُورَاﷲِ بِاَفوَاہِہِم وَ یَابَی اﷲُ اِلَّآ اَن یُّتِمَّ نُورَہ وَ لَو کَرِہَ الکٰفِرُونَ۔(التوبہ،۲۳)
۔ ”وہ چاہتے ہیں کہ اپنے مو نہوں سے اﷲ کے نور کو بجھا دیں، مگر اﷲ اپنے نور کو پورا کئے بغیر نہ رہے گا ، اگرچہ کافر اسے ناپسند کریں۔

ہم اسی طرح تمہارے ہر جھوٹ کا جواب دیں گے اور تمہارے شیطانی منصوبوں کو ضرب ابراہیمی سے پاش پاش اور ریزہ ریز ہ کریں گے۔
میں یہ باتیں ان گمراہ جماعتوں سے کر رہا ہوں جنہوں نے کچھ گندے درہموں سے یہ دنیا خرید لی ہے۔ یہ لوگوں کو پیچھے رہنے اور اسلام کی مدد سے روک رہے ہیں۔ ان گدھوں کو یہ احکام اپنے حکمرانوں کی طرف سے ملتے ہیں۔ جن کو احکام امریکہ سے ملتے ہیں اور امریکہ کو حکم یہودیوں سے ملتا ہے۔اے گدھو! تم مرتبہ اور درہم کی عبادت کرتے ہو جو تمہارے حکمرانوں کے قبضے میں ہے۔ اور تمہارے حکمران امریکہ کی عبادت کرتے ہیں اور امریکہ یہودیوں کی عبادت کرتا ہے اور یہودی شیطان کی عبادت کرتے ہیں۔ ان کرایہ کے گدھوں نے اپنے آپ کو غلاموں (حکمران) پر بیج دیاہے ، جو( حکمران) غلاموں (امریکہ) کی عباد ت کرتے ہیں، اور یہ غلام(امریکہ)، شیطان کے پجاریوں(یہودیوں) کے غلام ہیں۔
میں ان گدھوں سے کہتا ہوں، کہ بس کرو یہ سب کچھ، اور یہیں رک جاؤ۔ اور یہ بہتر ہے تمہارے لئے اگر تم سمجھتے ہو۔ یہ (حکمران) تمہیں کچھ فائدہ نہ دیں گے۔ تمہاری موجودہ حالت تم پر عذاب الٰہی ہے۔ جو اﷲ کے دشمنوں کو دوست بناتے ہیں تم ان کے پیچھے جاتے ہو، جب ان پر عذاب آئے گااور اﷲ ان کے لئے اپنے رحمت کے دروازے بند کر دے گا تو تم ان پر سب سے بڑے بوجھ ہو گے۔
بے شک تمہیں ایک دن مرکر اپنے رب کا سامنا کرنا ہے جو تم سے تمہارے اعما ل کا جوابطلب کرے گا۔ تمہارا فلسفہ اور منطق اس دن کچھ کام نہ آئے گا۔ اور نہ ہی تمہارا جھوٹ اور تحریف کچھ کام آئے گا۔ بے شک اﷲ ہر راز اور چھپی چپز سے واقف ہے۔ اﷲ تمہارے دلوں کے راز اگلوا دے گا اور تمہارے اعمال افشا ں کر دے گا۔ اس دن یہ بات صاف صاف سامنے آ جائے گی کہ تم اﷲ کے دوست تھے یا دشمن۔
وَاتَّقُوا یَومًا تُرجَعُونَ فِیہِ اِلَی اﷲِقف ثُمَّ تُوَفّٰی کُلُّ نَفسٍ مَّا کَسَبَت وَ ہُم لاَیُظلَمُون۔(البقرہ، ۱۸۲)
”اور اس دن سے ڈرو جس میں تم اﷲ کی طرف لوٹائے جاؤ گے، پھر ہر ایک کو جو اس نے کمایا ہو گا پورا کر دیا جائے گا۔ اور ان پر کوئی زیادتی نہیں کی جائے گی۔

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s